کورونا کا مہلک وار۔!!! مولانا فضل الرحمان بھی نہ بچ سکے۔۔۔ انتہائی تشویشناک خبر نے کارکنان کی دوڑیں لگوا دیں

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد کورونا وائرس کےحملوں میں تیزی آنے لگی ہے۔ گذشتہ گھنٹوں میں 1452 کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 33 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں ، جس کے بعد اموات کی کل تعداد 770ہوگئی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس کےتیزی سے وارجاری ہے، ملک بھرمیں اس وقت کوروناوائرس کے 25ہزار323 مریض زیرعلاج ہیں۔

گزشتہ چوبیس گھنٹے کےدوران نئے 1425 کیسز سامنےآئے، جس کے بعد تصدیق شدہ کیسزکی کل تعداد 35ہزار778 ہوگئی۔این سی اوسی کے مطابق گزشتہ24گھنٹےکےدوران ملک بھرمیں کوروناسے 33 اموات ہوئیں اور ملک بھر میں کوروناوائرس کے باعث اموات 770 تک جا پہنچی جبکہ 89ہزار695 کورونا کے مریض صحتیاب ہوچکے ہیں۔ کرونا وائرس اراکین اسمبلی و سینیٹ میں بھی پھیلنے لگا، سینیٹ کے دو ارکان سینیٹر جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے بھائی مولانا عطا الرحمان اور سینیٹر فدا محمد میں کرونا کی تشخیص ہوئی ہے۔ اراکین سینٹ میں کرونا وائرس کی تشخیص کے بعد انہیں سینیٹ اجلاس میں شرکت کرنے سے روک دیا گیا تھا، مولانا عطا الرحمان اور سینٹر فدا محمد نے خود کو قرنطینہ کر لیا ہےمولانا عطاء الرحمن کی وجہ سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن بھی اس وباء سے متاثر ہو سکتے ہیں۔ قبل ازیں بلوچستان کے وزیر خزانہ ظہور بلیدی بھی کرونا وائرس کا شکار بن گئے۔ کرونا وائرس کی تشخیص کے بعد ظہور بلیدی نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ میرا کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثب آیا ہے، مجھ میں کورونا کی علامات ظاہرنہیں ہوئیں لیکن ڈاکٹروں کی ہدایت پرخود کو قرنطینہ کر لیا ہے۔صحت یاب ہو رہا ہوں۔ صحت یابی کےلیے دعا کرنے والوں کا تہہ دل سے مشکور ہوں۔ ایم کیو ایم کی رکن سندھ اسمبلی منگلا شرما میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔

منگلا شرما کا کہنا تھا کہ میرے شوہر نے حال ہی میں بلوچستان کا سفر کیا تھا جس کے بعد شوہر اور مجھ میں مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔میں اور میرے شوہر قرنطینہ میں ہیں۔ واضح رہے کہ پاکستان میں کرونا کا پھیلاؤ تیزی سے جاری ہے، متعدد اراکین اسمبلی میں کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے،سیاسی رہنماؤن میں بھی کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جن میں سے کچھ صحتیاب ہو چکے ہیں ۔سابق وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی بیٹی، ڈاؤ یونیورسٹی کی ماہر امراض نسواں پروفیسر نصرت شاہ کرونا وائرس کا شکار ہو گئی ہیں،رکن قومی اسمبلی نفیسہ شاہ نے اپنی بہن کے کرونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق کردی۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے نفیسہ شاہ کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر نصرت نے علامات ظاہر ہونے پر خود کو آئسولیٹ کرلیا تھا،انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ پروفیسر نصرت جلد صحت یاب ہوکر اپنی ملازمت پر آئیں گی۔ واضح رہے کہ سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے بعد اب قومی اسمبلی کے 2 اراکین اور متعدد ملازمین میں بھی کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے ۔ سپیکر قومی اسملبی کرونا وائرس سے صحت یاب ہو چکے ہیں.اراکین پارلیمنٹ کے ٹیسٹ کی رپورٹ نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ اسلام آباد نے جاری کی ہے ۔ جس کے مطابق کہ تحریک انصاف کے ارکان قومی اسمبلی گل ظفر خان اور محبوب شاہ میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے ، رکن قومی اسمبلی گل ظفر کا تعلق باجوڑ سے جبکہ رکن قومی اسمبلی محبوب شاہ کا تعلق لوئر دیر سے ہے ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.