کون کونسے چینلز ملک ریاض اور بحریہ ٹاؤن کے خلاف خبریں چلانے سے روکتے ہیں اور اسکی وجہ کیا ہے؟ نامور تجزیہ کار وجاہت سعید نے ایسا انکشاف کر دیا کہ پاکستانی دنگ رہ گئے

لاہور( نیوز ڈیسک)پاکستانی صحافی و تجزیہ کار وجاہت سعید خان نے انکشاف کیا ہے کہ دنیا نیوز اور سما نیوز میں بطور صحافی کام کرنے کے دوران انہیں ملک ریاض اور بحریہ ٹاؤن کے خلاف رپورٹنگ سے روکا گیا۔گذشتہ چند روز سے سوشل میڈیا پر ملک ریاض کی بیٹیوں کی جانب سے اداکارہ عظمیٰ خان کے گھر پر کیا جانے

والا حملہ زیربحث ہے۔ سوشل میڈیا صارفین اس معاملے پر میڈیا کی خاموشی اور جانبدرانہ رپورٹنگ کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ صارفین کی ایک بڑی تعداد کا کہنا ہے کہ پاکستانی میڈیا ملک ریاض کے خلاف رپورٹنگ سے گھبراتا ہے اور طاقتوروں کے گھر کی لونڈی بنا ہوا ہے۔اب سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے پاکستانی صحافی و تجزیہ کار وجاہت سعید حسین نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں بطور صحافی کام کرنے کے دوران انہیں ملک ریاض اور بحریہ ٹاؤن کے خلاف رپورٹنگ سے روکا گیا۔وجاہت سعید نے ملک ریاض کی بیٹی عنمبر ملک کو گرفتار کرنے کے حوالے سے وائرل ٹرینڈ میں اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ پاکستان میں 15 سالہ رپورٹنگ کیرئیر میں، میں نے جن مقامی چینلز کے لیے کام کیا ان میں سے کچھ میں یہ حکم تھا کہ ملک ریاض اور بحریہ ٹاؤن سے دور رہا جائے۔وجاہت سعید نے اپنی ٹویٹ میں مزید بتایا کہ سما نیوز اور دنیا نیوز نے ملک ریاض کے خلاف رپورٹنگ سے روکا جبکہ جیو نیوز، ڈان نیوز اور آج ٹی وی کے لیے کام کرتے ہوئے ایسا کوئی آرڈر نہیں تھا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.