پاکستان پر بڑھ چڑھ کر بولنے والی انڈین فوج چین کے سامنے خاموش کیوں رہتی ہے؟ خود بھارتی جنرل نے سچ بتادیا

کراچی (ویب ڈیسک) انڈیا کے سابق فوجی سربراہ بکرم سنگھ نے برطانوی میڈیا کو بتایا ہے کہ انڈین فوج چین کے ساتھ سرحد پر چینی فوج کو بھرپور جواب دی سکتی ہے اور اس کے پاس ایسا کرنے کی صلاحیت ہے لیکن اس طرح کی کارروائی کا فیصلہ فوج نہیں بلکہ سیاسی قیادت کرتی ہے۔

جنرل بکرم سنگھ نے کہا ’ہمیں اس حوالے سے محتاط رہنا ہوتا ہے کہ ہماری صلاحیت کیا ہے اور ہم کیا کر سکتے ہیں۔ ہمیں پتا ہے کہ کئی ایسے علاقے ہیں جہاں ہم چین کو اسی کی زبان میں جواب دے سکتے ہیں۔‘ ،’ہم کوئی بھی قدم اٹھاتے ہیں تو اس کے دیر پا اثرات کے بارے میں بھی سوچنا چاہیے۔ چین کے معاملے میں وزیر اعظم کے دفتر اور وزارت دفاع کو ہی فیصلہ لینا ہوتا ہے کیونکہ ایسی صورت میں تصادم میں اضافے کا پورا خدشہ ہوتا ہے۔ برطانوی میڈیا کا کہنا ہے جب پاکستان کے ساتھ سرحد پر کشیدگی کی بات آتی ہے تو انڈین فوج کا انداز بالکل مختلف ہوتا ہے۔ جنرل بکرم سنگھ نے بتایا: ’پاکستان کے ساتھ کنٹرول لائن کا معاملہ بالکل الگ ہے ، یہاں گولہ باری عام بات ہے ۔‘ ’بالاکوٹ جیسی کوئی بڑی کارروائی کی بات ہو تب ہی فوج کو حکومت سے منظوری لینی پڑتی ہے ورنہ فوج یہاں خود ہی فیصلہ کرتی ہے۔ لیکن چین کے ساتھ معاملہ زیادہ نازک ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.