اس دفعہ حج ہو گا کہ نہیں ؟ سعودی عر ب نے تاریخی اعلان کردیا

ریاض (ویب ڈیسک) سعودی عرب کے وزیرِ صحت کے ترجمان نے کہا ہے کہ حج کے بارے میں مختلف پہلوؤں پر غور جاری ہے تاہم 21 جون کے بعد صورتحال واضح کر دی جائے گی.سعودی وزارتِ صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبدالعالی نے کہا ہے کہ حج کے حوالے سے معاملات پر سنجیدگی سے غور کیا

جارہا ہے، فیصلہ عوام الناس کے بہترین مفادات کو مقدم رکھتے ہوئے کیا جائے گا۔ترجمانِ صحت نے منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ 21 جون کے بعد کی حکمت عملی کے بارے میں تفصیلی طور پر مطلع کریں گے تاکہ کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے آئندہ کے مرحلے میں احتیاطی تدابیر اخیتار کی جاسکیں.سبق نیوز کے مطابق ترجمانِ صحت ڈاکٹر محمد العبدالعالی نے کہا کہ ’ کورونا کے حوالے سے احتیاطی تدابیر کے بارے میں جامع حکمت عملی مرتب کی جارہی ہے جس پر سب کو عمل کرنے کی ضرورت ہے.حج کی ادائیگی کے حوالے سے سوال پر ترجمانِ صحت کا کہنا تھا کہ جیسا کہ ماضی میں مختلف موقعوں پر حالات کا جائزہ لینے کے بعد ان کے تمام پہلوؤں پر غور کر کے فیصلہ کیا جاتا رہا اس بار بھی ایسا ہی کیا جائے گا.اس میں شک کی کوئی گنجائش نہیں کہ سعودی عرب اور اسکی قیادت و عوام اور تمام ادارے ہمیشہ سے ہی حرمین شریفین اور ضیوف الرحمان و معتمرین و زائرین مسجد الحرام کی خدمت اپنے لیے باعثِ افتخار سمجھتے ہیں اور تمام ادارے حج کی ادائیگی کے لئے سنجیدگی سے سوچ رہے ہیں.جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق برطانیہ میں کورونا وائرس کے علاج کے حوالے سے ایک نئی پیشرفت سامنے آ گئی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برطانوی ماہرین نے ایک ’اِن ہیلر‘ (Inhaler)کے بارے میں انکشاف کیا ہے کہ وہ ابتدائی مرحلے میں کورونا وائرس کا علاج کر سکتا ہے۔ اس انکشاف کے بعد ملک بھر میں اس اِن ہیلر کے تجربات شروع کر دیئے گئے ہیں اور ان تجربات میں کورونا وائرس کے مریض خود ہی اپنا علاج کریں گے۔رپورٹ کے مطابق اس اِن ہیلر کا نام ’نیبیولائزر‘ (Nebuliser)ہے جو یونیورسٹی آف ساﺅتھ ہیمپن کے سائنسدانوں نے تیار کیا تھا۔ برطانوی حکام نے شہریوں کو اس ان ہیلر کے ٹرائیلز میں شامل ہونے کی دعوت دی ہے۔ انہوں نے اعلان کیا ہے کہ جس شخص کا بھی کورونا ٹیسٹ مثبت آتا ہے وہ ان ٹرائیلز کے لیے رجسٹریشن کرا سکتا ہے۔ رجسٹریشن کرانے والے تمام افراد کو گھر بیٹھے دن میں دو بار، دو ہفتے تک یہ ان ہیلر استعمال کرنا ہو گا اور ماہرین ان لوگوں کی ویڈیو لنک کے ذریعے مسلسل نگرانی کرتے رہیں گے اور ان کی صحت کو جانچتے رہیں گے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *