مسلمانوں کیخلاف زہریلا پراپیگنڈہ۔!! امریکی صدر کا ’’ایغور مسلمانوں‘‘ کیخلاف کریک ڈاؤن، ٹرمپ نے بل پر دستخط کردیئے

کراچی (ویب ڈیسک) امریکا کے سابق مشیر قومی سلامتی کی جانب سے ایک کتاب میں امریکی صدر پر بڑے پیمانے پر ایغورمسلمانوں کی نظر بندی کی منظوری کے الزام کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک قانون سازی پر دستخط کردیے جس میں ایغور مسلمانوں پر کیے جانے والے مبینہ کریک ڈائون

پر چین کیخلاف پابندیوں کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ چینی وزارت خارجہ نے خبردار کیا ہے کہ امریکی قانون کی منظوری پر واشنگٹن کو جوابی کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اور نتائج کا ذمہ داری خود امریکا ہوگا۔ امریکا چین کے داخلی معاملات میں مداخلت سے گریز کرے اور اس کے مفادات کو نقصان پہنچانا بند کرے۔ تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک قانون سازی پر دستخط کردیے جس میں ایغور مسلمانوں پر مبینہ کریک ڈاون پر پابندیوں کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ برطانوی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اس بل کو کانگریس نے صرف ایک مخالف ووٹ کے مقابلے کثرت رائے سے منظور کرلیا جس کا مقصد چین کی مسلم اقلیت کے اراکین پر ظلم و ستم کے ذمہ داروں کے خلاف پابندیوں کو لازم قرار دے کر چین کو ایک بھرپور پیغام دینا تھا۔ اقوامِ متحدہ کے اندازے کے مطابق چین کے خطے سنکیانگ میں 10 لاکھ سے زائد مسلمان حراستی مراکز میں قید ہیں۔امریکی عہدیداروں کی جانب سے چینی حکام پر مسلمان کو تشدد، بدسلوکی اور ’ان کی ثقافت اور مذہب کو مٹانے‘ کا الزام لگایا جاتا ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *