’’آپ کو سیالکوٹ میں منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملی اس لیے ۔۔‘‘ قومی اسمبلی میں فواد چوہدری نے خواجہ آصف کو آڑھے ہاتھوں لے لیا، لیگی رہنماء شکایت لے کر کہاں جا پہنچے؟

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کے دوران فواد چودھری کی مداخلت پر برہم ہو گئے ،خواجہ آصف نے کہاکہ یہ شخص مجھے 12 ،13 دن سے تنگ کررہا ہے،خاموش رہیں ورنہ یہاں وہ کہوں گا کہ منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی ۔

نجی ٹی وی جی این این کے مطابق سپیکر اسد قیصر کی سربراہی میں قومی اسمبلی کااجلاس جاری ہے،لیگی رہنما خواجہ آصف نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں یک دم بڑھا دی گئیں ،تقریرکے دوران فوادچودھری کی مداخلت پر خواجہ آصف برہم ہو گئے ،انہوں نے کہاکہ خاموش رہیں ورنہ یہاں وہ کہوں گا کہ منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی ۔اس پر فواد چودھری نے کہاکہ آپ کو بھی سیالکوٹ میں منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی ،خواجہ آصف نے کہاکہ یہ شخص مجھے 12 ،13 دن سے تنگ کررہا ہے ۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق اسلام آباد میں بلاول بھٹو زرداری اور اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ محمد آصف کا کہنا تھا کہ عمران خان کی حکمرانی ہمیں تباہی کی طرف لے جا رہی ہے، وقت آچکا ہےکہ ان کا حساب کتاب کر دیا جائے،حکومت سے نجات کا وقت آن پہنچا ،حکومت کی تبدیلی کے لئے ہر آئینی راستہ اختیار کریں گے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان قومی بوجھ بن گئے ہیں ،حکومت کے اتحادی اس کو چھوڑ کر جا رہے ہیں،اتحادیوں کا چھوڑ جانا اس بات کی نشاندہی ہے کہ حکومت کا آخری وقت آ پہنچا ہے،حکومت کی تبدیلی کے لئے ہر آئینی راستہ اختیار کریں گے، میاں شہباز شریف کے صحت یاب ہونے پر اے پی سی کا اعلان ہوگا ۔خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ اس مشکل صورتحال میں جب ملک میں وبا کا راج ہے اور یہ وبا ہزاروں جانیں لے چکی ہے، اکانومی جو پہلے تباہ ہوچکی تھی وبانے اس کی ریکوری کے دروزاے بند کردئیے ہیں، حکمرانوں نےریلیف دینے کی بجائے عوام پر مزید ناقابل برداشت بوجھ ڈال دیا گیا ہے،عمران خان کی حکمرانی پاکستان کیلئے ناقابل برداشت بوجھ بن گئی ہے، اس مشکل وقت میں جب ایک وبا نے پاکستان کو لپیٹ میں لیا ہوا ہے اور لوگ مشکل کا شکار ہیں، ان حالات میں عوام کو ریلیف دینے کے بجائے ان پر مزید ناقابل برداشت بوجھ ڈال کر وارداتیں ڈالی جارہی ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *