کپتان کی وجہ سے میرے والد کوروناوائرس کا شکار ہوئے۔۔۔ یوسف رضا گیلانی کاکورونا ٹیسٹ مثبت آنے پر بیٹے نے عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنا ڈالا

ملتان (ویب ڈیسک)سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی بھی کورونا کاشکارہو گئے،سابق وزیراعظم نے خود کو گھر میں قرنطینہ کرلیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق وزیراعظم اور پیپلزپارٹی کے سینئررہنما یوسف رضاگیلانی کا کورونا ٹیسٹ بھی مثبت آگئے، علی قاسم گیلانی نے والدکے کورونا میں مبتلا ہونے کی تصدیق کردی۔علی قاسم گیلانی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر

اپنے ٹوئٹ میں عوام سے اپنے والد کےلئے دعا کی اپیل کی ہے،یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے قاسم گیلانی نے طنزیہ کہاکہ شکریہ عمران خان، آپ کی وجہ سے والد کی زندگی خطرے میں آگئی۔واضح رہے کہ سید یوسف رضا گیلانی کرونا وائرس کی وبا کے دوران نیب کے دفتر پیش ہوئے تھے۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے کہاہے کہ کورونانے پوری دنیامیں تہلکہ مچادیا،ہم کوروناکابہانانہیں بنارہے،پوری دنیامتاثر ہوئی،کوروناکی وجہ سے انڈسٹریز،کارخانے،دکانیں بندہوئیں،کوروناکی وجہ سے کاروباربندہوئے توایف بی آرکی کلیکشن بھی متاثرہوئی۔قرضوں کی واپسی معیشت کودرپیش بڑاچیلنج ہے،قرض نہ دیناہوتاتواحساس پروگرام کیلئے 3 ہزارارب روپے مختص کرتے۔مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ حکومت نے قرض واپسی کی مدمیں 5 ہزارارب خرچ کیے،ایف بی آرکی وصولی بھی بمشکل 3900 ارب روپے تک پہنچی،کورونانے پوری دنیامیں تہلکہ مچادیا،ہم کوروناکابہانانہیں بنارہے،پوری دنیامتاثرہوئی، کوروناکی وجہ سے انڈسٹریز،کارخانے،دکانیں بندہوئیں،کوروناکی وجہ سے کاروباربندہوئے توایف بی آرکی کلیکشن بھی متاثرہوئی۔انہوں نے کہاکہ ماضی میں لیے گئے قرضوںکے سودکی مدمیں 2700 ارب دینے پڑے،صوبوں کوادائیگی کے بعد وفاق کے پاس تقریباً 2 ہزارارب ہوتے ہیں،کوروناسے پہلے ٹیکس محاصل میں 17 فیصداضافہ ہوا،کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 20 ارب ڈالر 3 ارب ڈالرتک لائے، نان ٹیکس ریونیوکاٹارگٹ 1100 ارب روپے تھا،ہم نے نان ٹیکس ریونیوٹارگٹ 1600 ارب روپے حاصل کیے۔مشیر خزانہ نے کہاکہ کوروناسے معیشت کو 3 ہزارارب کانقصان ہوا،بیرونی سرمایہ کاری میں 137 فیصداضافہ ہوا،ٹیکس وصولی میں 700 ارب روپے کے نقصان کاسامنارہا،ایف بی آرکی ٹیکس وصولی بھی کوروناکی وجہ سے متاثرہوئی۔عبدالحفیظ شیخ نے کہاکہ موڈیزنے پاکستان کی ریٹنگ کوبڑھایاتھا،چھوٹے کاروباری افرادکے 3 ماہ کے بجلی بل اداکیے گئے،ڈیزل اورپٹرول کی قیمتوں میں خاطرخواہ کمی کی گئی،زرعی شعبے کی بہتری کیلئے 50 ارب روپے دیئے گئے،کاشتکاروں کی بہتری کیلئے 280 ارب کی گندم خریدی گئی،6 لاکھ بزنس انٹرپرائززکوفائدہ پہنچایاگیا،صارفین کے یوٹیلیٹی بلزکوبھی 6 ماہ کیلئے موخرکیاگیا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.