وزارت داخلہ کے نئے ایس اوپیز۔!!!بخار میں مبتلا ملازمین کے حوالے سے بڑا اعلان، عمل درآمد کی پابندی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزارت داخلہ کے نئے ایس اوپیز جاری، بخار میں مبتلا ملازمین گھر سے کام کر ینگے،50فیصد حاضر عملہ سماجی فاصلے، فیس ماسک اور سینی ٹائزر سمیت احتیاطی تدابیر پر عملدر آمد کا پابند ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق وزارت داخلہ نے کورونا وائرس کے تناظر میں احتیا طی تدابیر کیلئے

نئی ایس او پیز جاری کردئیے ہیں۔ یہ ایس او پیز اگلے 15دن کیلئے جاری کئے گئے ہیں جن کا اطلاق آج سے ہوگا۔ 50فیصد عملہ حاضر ہوگا جس کی نشاندہی کردی گئی ہے۔ یہ حاضر عملہ بھی سماجی فاصلے، فیس ماسک اور سینی ٹائزر کے استعمال سمیت تمام ایس او پیز پر عمل درآ مد کا پابند ہوگا۔ دیرینہ امراض میں مبتلا ملازمین گھر سے کام کریں گے تاہم وہ اسٹیشن نہیں چھوڑیں گے۔ دوسری جانب زیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ بازاروں میں ایس او پیز کی خلاف ورزیاں برداشت نہیں کریں گے، ماسک پہننے پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے گا۔ وزیراعلیٰ سے ملاقات میں صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن یاسر ہمایوں نے کوئین میری کالج لاہور کی جانب سے کرونا فنڈ کے لئے7 لاکھ 89 ہزار روپے کا چیک دیا۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن یاسر ہمایوں نے وزیراعلی سے ملاقات کی اور کوئین میری کالج لاہور کی اساتذہ اور عملے کی جانب سے چیف منسٹر فنڈ میں عطیہ کیا گیا چیک دیا۔ وزیر اعلی عثمان بزدار نے کوئین میری کالج کی جانب سے چیف منسٹر فنڈ میں رقم عطیہ کرنے پراساتذہ اور عملے کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر وزیر اعلی نے کہا ہے کہ چیف منسٹر فنڈ برائے کرونا کنٹرول میں عطیہ کی جانے والی رقم کے امین ہیں، فنڈ کی رقم کو ایمانداری کے ساتھ حقداروں تک پہنچایا جائے گا۔ پاکستانی عوام نے ہمیشہ آزمائش میں متاثرہ بہن بھائیوں کی دل کھول کر مدد کی ہے۔ پاکستانی قوم نے ہر چیلنج کا بہادری سے مقابلہ کیا ہے۔ کرونا وباء ے باعث معاشی اور سماجی تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں۔ ہم سب کو بدلتے ہوئے ماحول کے مطابق طرز زندگی بدلنا ہوگا۔عوام کی زندگیاں محفوظ بنانے کے لئے حکومتی ہدایات پر عمل کرنے میں ہی تحفظ ہے۔ پنجاب میں کرونا ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے گا۔ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانون کے تحت کارروائی ہو گی۔کرونا وباء کا پھیلاؤ روکنے کے لئے عوام کو حکومتی اقدامات پر من و عن عملدرآمد کرنا ہو گا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *