بجٹ 2020-21 کتنے ارب روپے کا ہوگا؟ دفاع کیلئے کتنے فیصد اضافے کی تجویز کر دی گئی؟ جان کر آپ بھی حمایت کریں گے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) آئندہ وفاقی بجٹ 7 ہزار 600 ارب روپے کا ہو گا جو 12 جون کو پیش کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی وفاقی حکومت رواں ماہ کی 12 تاریخ کو نیا بجٹ پیش کیا جائے گا جس کا حجم سات ہزار چھ سو ارب روپے رکھا جائے گا۔

آئندہ مالی سال کے دوران شرح نمو کا ہدف 3 فیصد رکھنے کی تجویز زیر غور ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث تمام اہداف کم رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ وزارت خزانہ وفاقی بجٹ کے ابتدائی خدوخال میں قرضوں اور سود کی ادائیگی بڑا بوجھ قرضوں اور سود کی ادائیگی پر 3 ہزار 2 سو ارب سے زائد خرچ ہونگے۔ ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق دفاعی بجٹ میں 10 فیصد سے زائد اضافے کی تجویز زیر غور ہے۔ دفاع کیلئے 1 ہزار 4 سو ارب روپے سے زائد مختص کیے جاسکتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سبسڈیز اور پنشن ادائیگی کیلئے 700 ارب سے زائد مختص کرنے کی تجویز ہے۔ آئندہ سال ایف بی آر کیلئے 51 سو ارب روپے کا ہدف مقرر کیا، ایف بی آر اہداف حاصل کرنے کیلئے ٹیکس نیٹ کو بڑھایا جائے گا۔ ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق وزارتوں اور ڈویژنز کے سالانہ بجٹ میں کٹوتی ہو گی۔ وفاقی حکومت کے اخراجات کیلئے 490 ارب سے زائد مختص کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق آئندہ مالی سال کے دوران برآمدات کو بڑھانے کا ہدف رکھا جائے گا، بجٹ سے پہلے وزارت خزانہ بجٹ ونگ حکام اسلام آباد سے باہر نہیں جائیں گے۔ حکومت کی جانب سے وفاقی بجٹ 12 جون کو پیش کیے جانے کا امکان ہے۔نجی ٹی وی جیونیوز نے ذرائع کے حوالے سے کہاہے کہ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت 2 جون کو وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوگا جس میں بجٹ کی تجاویز پیش کی جائیں گی اور پھر اسے 12 جون کو اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان 12 جون سے قبل باقاعدگی کے ساتھ بجٹ بریفنگ لیتے رہیں گے۔ذرائع نے بتایا کہ وفاقی حکومت نے آئندہ بجٹ کے مجموعی حجم میں 10 فیصد اضافے کا فیصلہ کیا ہے اور آئندہ مالی سال کے لیے ساڑھے 7 ہزار ارب سے زیادہ کا وفاقی بجٹ پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.