Breaking News
Home / پاکستان / صدر نے اپنی گاڑی رکوا کر جنازے کو کندھا دیا

صدر نے اپنی گاڑی رکوا کر جنازے کو کندھا دیا

وہ واقع 16 نومبر 1983 کا ہے جب صدرِپاکستان جنرل محمد ضیاء الحق نے سیکورٹی کے تمام نظام کو بالائت طاق رکھتے ہوئے ایک مسلمان کے جنازے کو کندھا دیااور اپنے حسن اخلاق کی وجی سے جنازے میں شریک ہزاروں افراد کے دل جیت لئے، جنرل ضیاء الحق اسلام آباد جا رہے تھے کہ راستے میں ایک جنازہ آرہا تھا یہ جنازہ حاجی ولایت خان کا تھا جنازے میں ہزاروں افراد شریک تھے جنازہ جب قریب آیا تو صدر کے سیکورٹی کے عملے نے ہونٹر بجا کر راستہ صاف کرنے کی کوشش کی تو صدر پاکستان ضیاء الحق نے انہیں منع کر دیااور خود اپنی کار سے اتر کر جنازے کو کندھا دیا اور جنازہ گاہ تک گے؛ اور وہاں سے فارغ ہونے کے بعد اسلام آباد روانہ ہو گے
..ایسے تھے ہمارے لیڈر.. یہ واقعہ 16 نومبر 1983 کا ہے جب صدرِپاکستان جنرل محمد ضیاء الحق نے سیکورٹی کے تمام نظام کو بالائت طاق رکھتے ہوئے ایک مسلمان کے جنازے کو کندھا دیااور اپنے حسن اخلاق کی وجی سے جنازے میں شریک ہزاروں افراد کے دل جیت لئے، جنرل ضیاء الحق اسلام آباد جا رہے تھے کہ راستے میں ایک جنازہ آرہا تھا یہ جنازہ حاجی ولایت خان کا تھا جنازے میں ہزاروں افراد شریک تھے جنازہ جب قریب آیا تو صدر کے سیکورٹی کے عملے نے ہونٹر بجا کر راستہ صاف کرنے کی کوشش کی تو صدر پاکستان ضیاء الحق نے انہیں منع کر دیااور خود اپنی کار سے اتر کر جنازے کو کندھا دیا اور جنازہ گاہ تک گے؛ اور وہاں سے فارغ ہونے کے بعد اسلام آباد روانہ ہو گے
..ایسے تھے ہمارے لیڈر..

Share

About admin

Check Also

’’حماد اظہر کو ہٹانے کی وجہ کیا بنی؟ ‘‘ وفاقی کابینہ میں رد و بدل پر حامد میر بھی پھٹ پڑے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر کا کہنا ہے کہ حماد …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com