Breaking News
Home / دلچسپ و عجیب / خبردار ہوشیار ۔۔۔!!! موبائل بیچنے کے بعد لوگ آپ کا پرسنل ڈیٹا کیسے ریکور کر لیتے ہیں ؟ ایسی حقیقت جس سے لاکھوں لوگوں کے گھر اجڑ دئے

خبردار ہوشیار ۔۔۔!!! موبائل بیچنے کے بعد لوگ آپ کا پرسنل ڈیٹا کیسے ریکور کر لیتے ہیں ؟ ایسی حقیقت جس سے لاکھوں لوگوں کے گھر اجڑ دئے

کراچی (ویب ڈیسک) آج کل ہر وقت موبائل فون کا استعمال اور ہاتھ میں رکھنا عام ہے بعض اوقات غلطی سے سمارٹ فون یا ڈیجیٹل کیمرے سے اہم تصویر ڈیلیٹ ہو جاتی ہے تاہم یہ یاد رکھنا اہم ہے کہ سمارٹ ڈیوائسز پر ڈیلیٹ ہونے والی تصاویر ہمیشہ کیلئے ختم نہیں ہوتیں

بلکہ انہیں ذرا سی محنت کے بعد واپس لایا جا سکتا ہے۔ اگر آپ کےسمارٹ فون سے تصاویر ڈیلیٹ ہوجائیں تو فوری طور پر وائی فائی منقطع کر دیں اور اسے سلیپ موڈ پر ڈال دیں، اگر ڈیجیٹل کیمرے میں ایسا ہوا ہے تو اسے بند کر کے کارڈ کو باہر نکال لیں۔ اس سے 2 فائدے ہوتے ہیں، پہلا تو یہ کہ ڈیلیٹ ہونے کا عمل مکمل ہونے سے پہلے تھم جاتا ہے۔دوسرے یہ کہ اس سے ڈیوائس کو ڈیلیٹ فائلز کے ڈیٹا پر اوور رائٹنگ سے روکا جاسکتا ہے، ڈیلیٹ شدہ تصویر کو واپس لانے کیلئے یہ بہت ضروری عمل ہیں۔ اینڈرائیڈ فون پر ڈیلیٹ ہوجانے والی تصاویر کی ریکوری کیلئے ایک بہترین مفت ٹول دستیاب ہے جسے ڈسک ڈگر کہا جاتا ہے۔ اس کا بیسِک فوٹو سکین کافی موثر ثابت ہوتا ہے تاہم تصویر کا ریزولوشن متاثر ہو سکتا ہے۔ آئی او ایس میں ایک فیچر کا اضافہ کیا گیا ہے جہاں ڈیلیٹ ہونیوالی تصاویر 30 دن تک موجود رہتی ہیں، اس مدت کے دوران وہاں سے تصاویر کو واپس فون کا حصہ بنایا جا سکتا ہے۔ دوسری جانب خبر یہ بھی ہے کہ واٹس ایپ استعمال کرنے والے اب ہو جائیں ہوشیار ، ایسی کچھ باتیں جن کی وجہ سے واٹس ایپ صارفین کو پابندی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔ ایک رپورٹ کے مطابق واٹس ایپ پر افواہیں پھیلانا ، نفرت انگیز پیغامات بھیجنا ، غیرقانونی سرگرمیوں سے متعلق پیغامات ، کسی کی توہین پر مبنی پیغامات اور کسی کو دھمکی آمیز پیغامات بھیجنے پر واٹس ایپ کسی صارف کو بین کر سکتا ہے ۔

About admin

Check Also

””لاہو میں اپنے شوہر کے شاگرد پر فدا ہونیوالی خاتون نے گھر بیٹھے چن چڑھا دیا ، جس نے سنا توبہ کرنے لگا““

اسلام آباد(نیوز دیسک) لاہور انویسٹی گیشن پولیس گرین ٹاؤن نے کارروائی کرتے ہوئے شہری انتظار …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com