Breaking News
Home / اہم خبریں / صوبائی ملازمین کی تنخواہ میں 25 فیصد اضافہ، صوبائی حکومت کے ساتھ مذاکرات شروع ہو گئے

صوبائی ملازمین کی تنخواہ میں 25 فیصد اضافہ، صوبائی حکومت کے ساتھ مذاکرات شروع ہو گئے

لاہور (نیوز ڈیسک)صوبائی وزیر قانون و کوآپریٹوز راجہ بشارت کے ساتھ مذاکرات کے بعد سول سیکریٹریٹ کے باہراحتجاجی ملازمین نے سڑکیں ٹریفک کے لیے خالی کر دیں جبکہ وزیر قانون نے پنجاب کے سرکاری ملازمین کے لئے وفاقی حکومت کے اعلان کردہ تنخواہوں میں 25 فیصد اضافے کے معاملہ پر کل

محکمہ خزانہ کے ساتھ اجلاس طلب کر لیا۔ احتجاجی ملازمین کے نمائندوں کے ساتھ آج شام کمشنر آفس میں دو گھنٹے جاری رہنے والے مذاکرات میں کمشنر لاہورذوالفقار گھمن، سپیشل سیکرٹری پرائمری ہیلتھ، سی سی پی او اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔اس موقع پر پنجاب کے مختلف محکموں کے گرینڈ الائنس اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کے نمائندوں نے اپنے مطالبات پیش کئے۔ راجہ بشارت نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کی اپ گریڈیشن، سپریم کورٹ کے فیصلہ پر عملدرآمد اور دیگر مطالبات حل کرانے کی یقین دہانی بھی کرائی۔۔۔ فارن فنڈنگ کیس عمران خان کیخلاف آنیوالا ہے، حکومت کیلئےنئی پریشانی کھڑی ہو گئی اسلام آباد (پی این آئی) سینئر صحافی ہارون الرشید نے فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ وزیراعظم عمران خان کے خلاف آنے کا امکان ظاہر کر دیا۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ چند ہفتوں میں ہونے والا ہے۔کچھ لوگ کہتے ہیں کہ ن لیگ کے دور میں جو الیکشن کمیشن کے ارکان تھے، ممکن ہے وہ عمران خان کے خلاف فیصلہ دیں۔۔ واضح رہے کہ اکبر ایس بابر نے تحریک انصاف کیخلاف 6 سال سے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کر رکھی ہے۔ اکبر ایس بابر کا دعویٰ ہے کہ تحریک انصاف کو بیرون ملک سے ممنوعہ فنڈنگ ہوئی، ان کے پاس اس کے شواہد بھی موجود ہیں۔ اکبر ایس بابر نے یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ تحریک انصاف مختلف حربوں کے استعمال سے اس معاملے

کو 6 سال سے لٹکاتی آ رہی ہے۔جبکہ تحریک انصاف کا موقف ہے کہ اکبر ایس بابر اپوزیشن جماعتوں کی پشت پناہی سے حکمراں جماعت پر بے بنیاد الزامات عائد کرتے آ رہے ہیں۔ تحریک انصاف نے اپنے اکاونٹس کی تفصیلات اکبر ایس بابر کو فراہم کرنے کی بار بار مخالفت کی ہے، اور اب الیکشن کمیشن کی اسکروٹنی کمیٹی نے بھی حکمراں جماعت کے حق میں ہی فیصلہ سنا دیا ہے۔ پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس دائر کرنے والے اکبر ایس بابر نے دعویٰ کیا تھا کہ لاکھوں روپے کے عطیات ان فرنٹ اکاؤنٹس میں عطیات دہندگان نے جمع کروائے اور پی ٹی آئی ملازمین سے نقد ادائیگی کے لیے چیکس پر دستخط کروا کر یہ رقوم نکالی گئیں ، یہ غیر قانونی سرگرمی پی ٹی آئی اور اس کی قیادت کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزامات کا باعث بن سکتی ہے میں یہ معاملہ 11 ستمبر 2011 کو ایک خط کے ذریعے پارٹی چیئرمین عمران خان کے علم میں لایا تھا۔پاکستان تحریک انصاف کے بانی کارکن اکبر ایس بابر نے کہا ہے کہ میں نے جو بڑی جنگ شروع کی ہے اس کے لئے ہم نے پاکستان تحریک انصاف کے نام سے پارٹی بنائی تھی تاکہ ہم اس پلیٹ فارم سے معاشرے میں انصاف لا کر کڑا احتساب کیا جا سکے۔پی ٹی آئی میری اور سب ورکروں کی مشترکہ پارٹی ہے میں اس نظام کے خلاف اکیلا مقابلہ کرتا رہونگا۔

Share

About admin

Check Also

چھوٹی عید کی بڑی خوشیاں ۔۔۔!!! عید الفطر ،حکومت نے عوام کو اچھی سنادی جان کر آپ بھی یقین نہیں کرینگے

چھوٹی عید کی بڑی خوشیاں ۔۔۔!!! عیدالفطر ،حکومت نے عوام کو اچھی سنادی جان کر …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com