Home / سٹی نیوز / پاکستان کو ہیرا منڈی کہنے والے پاکستان دشمن افغان لیڈر کی نواز شریف سے ملاقات۔ باہمی دلچسپی کہ امور پر تبادلہ خیال۔

پاکستان کو ہیرا منڈی کہنے والے پاکستان دشمن افغان لیڈر کی نواز شریف سے ملاقات۔ باہمی دلچسپی کہ امور پر تبادلہ خیال۔

لندن (ویب ڈیسک )پاکستان کو گالی دینے والے افغان نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر کی نوازشریف سے ملاقات۔۔افغان نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر حمداللہ محب نے کچھ عرصہ قبل پاکستان پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے سخت الفاظ کہے تھے اور پاکستان کو چکلا (قحبہ خانہ)کہا تھا

جس پر پاکستان کی طرف سے شدید احتجاج سامنے آیا۔ حمداللہ محب کی گالی کے بعد پاکستان نے آئندہ حمداللہ محب سے کسی قسم کا رابطہ نہ رکھنے کا فیصلہ کیا۔ننگر ہار میں اپنے خطاب میں مشیر حمداللہ محب نے طالبان کو خبردار کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی انہیں اپنے مقاصد کے حصول کے لیے قربان کر سکتی ہے۔پاکستان کو نہ تو ان کی ضرورت ہے اور نہ پاکستان، طالبان کو افغانستان میں حکومت دلوا سکتا ہے۔انہوں نے دعوی کیا کہ پاکستان نے طالبان کو جو کچھ بتایا ہے، وہ ایک جھوٹ ہے۔ ان کے بقول پاکستان کو جو چیز طالبان سے درکار ہے وہ اپنے مقاصد کے لیے انہیں قربان کر رہے ہیں۔وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بار بار غیر مہذب اور غیر ضروری ریمارکس اب تک امن عمل میں ہونے والی پیشرفت کو نظرانداز اور ختم کرنے کی سوچی سمجھی کوشش کے مترادف ہیں۔شاہ محمود قریشی نے حمداللہ محب کے بیان پر ردِعمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’جب سے آپ نے پاکستان کا موازنہ قحبہ خانے سے کیا ہے میرا خون کھول رہا ہے۔ آپ کو شرم آنی چاہیے اور آپ کو اپنا طرز عمل ٹھیک کرنا ہو گا۔‘شاہ محمود قریشی نے مزید کہا تھاکہ اب کوئی بھی پاکستانی نہ تو افغان مشیر برائے قومی سلامتی سے بات کرے گا اور نہ ہی ہاتھ ملائے گا۔پاکستان نے جس سے بات نہ کرنے اور ہاتھ نہ ملانے کا اعلان کیا، جس نے پاکستان کو گالی دی اور چکلہ کہا، نوازشریف لندن میں اسی سے ملاقاتیں کرتے رہے۔ جس پاکستان نے نوازشریف کو تین بار وزیراعظم، دو بار وزیراعلیٰ بنایا، اسی کو گالی دینے والے سے نوازشریف ملاقاتیں کرتے رہےافغان حکومت نے حمداللہ محب سے نوازشریف کی ملاقات کی خبر شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزر حمداللہ محب اور وزیر مملکت برائے امن سید سادات نادری نے سابق وزیر اعظم نواز شریف سے لندن میں ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جس شخص نے پاکستان کو گالی دی، پاکستان نے اس سے کسی قسم کا تعلق نہ رکھنے اور رابطہ نہ کرنے کا اعلان کیا، نوازشریف نے اس سے ملاقات کیوں کی؟ کیا نوازشریف کو نہیں معلوم کہ اس شخص نے پاکستان سے متعلق کیا غلط زبان استعمال کی ہے؟

About admin

Check Also

نواز شریف کی جلد ہی پاکستان واپسی اور چوتھی بار وزیراعظم منتخب ہونے کی تہلکہ خیز پیشنگوئی

ور مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی جاویدلطیف نے دعویٰ کیا ہے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com